جادو ختم کرنےکا روحانی علاج

جادو ختم کرنےکا روحانی علاج
جادو ختم کرنےکا روحانی علاج

جادو کا شک ہو تو کسی دین دار پابند شرع عامل کو دکھایا جائے۔ جس طرح مرض کی علامات ہوتی ہیں اسی طرح سحر کی بھی علامات ہوتی ہیں، جنھیں دیکھ کر ماہرین فن کو سحر کا اندازہ ہوجاتا ہے۔

 جادو کے اثر سے انسان کی صحت متاثرہوتی ہے اور بسا اوقات جان بھی چلی جاتی ہے، جمہور علماء اس بات کے بھی قائل ہیں کہ سحر کی تاثیر سے شی کی حقیقت بھی بدل سکتی ہے، موطا امام مالک میں حضرت کعب بن احبار-رضی اللہ عنہ- سے ایک حدیث مروی ہے جو جمہور کی دلیل ہے، حضرت کعب فرماتے ہیں: لو لا کلمات أقولھن لجعلتني الیہود حمارًا (کچھ کلمات ہیں جن کو اگر میں نہ پڑھتا تو یہود مجھے گدھا بنا دیتے)

اگر کوئی شخص سحر سے متاثر ہے تو وہ کسی دین دار پابند شرع عامل سے ملے اور علاج کے لیے وہ جو عمل تجویز کرے اس کو کرتا رہے۔

 اگر کوئی متاثر تو نہیں لیکن آئندہ محفوظ رہنا چاہتا ہے تو اس کو چاہیے کہ قرآن کریم کی کچھ آیات جو دفع سحر میں موثر ہیں ان کو صبح و شام پڑھ لینا چاہیے۔ ان آیات کو شیخ الحدیث حضرت مولانا زکریا صاحب رحمة اللہ علیہ نے ایک منزل کی شکل میں جمع کردیا ہے جسے بہ آسانی حاصل کیا جاسکتا ہے۔

جادو کی حرمت پر تمام ائمہ کا اجماع ہے اگر کسی شخص کے بارے میں معلوم ہوجائے کہ وہ سحر کرتا ہے تو اس سے دور رہے اوراس کے ضرر سے بچنے کے لیے ممکنہ سعی کرے۔ اگر اسلامی حکومت ہو تو ایسے شخص کو قاضی کے سامنے پیش کرے۔

 کسی دوا سے آفاقہ نہ ہونا۔ جادو کے مریض کو نماز قرآن اور آذان وغیرہ سے تنگی محسوس ہوتی ہے ۔ دین کے بارے میں کفریہ خیالات آتے ہیںمسجد جانے سے دل گھبراتا ہے اس کے علاوہ سستی کا عادی ہوجانا بہت زیادہ بھولنا بلاوجہ رونے کو دل کرنا ، بے چین رہنا اور ایسا محسوس ہونا کہ کوئی آوازیں دے رہا ہے اپنی حالت شکل وصورت کا خیال نہ رہنا منہ اُٹھا کر کہیں بھی چلے جانا ویران جگہوں پر چلے جانا اور مرگی کے دورے پڑنا ۔یہ جادو کی وہ ابتدائی علامات ہیں جن کو عام طور پر نظرانداز کردیا جاتا ہے ۔اگر آپ کے عزیز واقارب میں سے کوئی پراسرار بیماری میں مبتلا ہے توضرورکسی روحانی معالج سے رابطہ کریں۔

شیئر کریں
مدیر
مصنف: مدیر
لفظ نامہ ڈاٹ کام کی اداریہ ٹیم کے مدیران کی جانب سے

کمنٹ کریں