کاغذ پر شاعری

Read Urdu Poetry on the topic of Papers Par Urdu Shayari (Paper Pe Sher o Shayari). You can read famous Urdu Poems about Papers Urdu Poetry (Paper Poetry in Urdu language) and Urdu Sher o Shayari Whatsapp Status. Best and popular Urdu Ghazals and Nazms can be shared with friends. Urdu Tiktok Status Poetry and Facebook Share Urdu Poetry available.

white ceramic teacup with saucer near two books above gray floral textile
Photo by Thought Catalog on <a href="https://www.pexels.com/photo/white-ceramic-teacup-with-saucer-near-two-books-above-gray-floral-textile-904616/" rel="nofollow">Pexels.com</a>

لکھ کے رکھ دیتا ہوں الفاظ سبھی کاغذ پر
لفظ خود بول کے تاثیر بنا لیتے ہیں
محمد مستحسن جامی

کبھی میں ڈھلتا ہوں کاغذ پہ نقش کی صورت
میں لفظ بن کے کسی کی زباں میں تیرتا ہوں
خاور نقوی

ہر لفظ کو کاغذ پہ اُتارا نہیں جاتا
​ہر نام سرِعام پکارا نہیں جاتا
 انعام الحق جاوید

کتابِ قسمت میں کورے کاغذ بھی پائے جاتے ہیں چیدہ چیدہ
کہ جن میں دَم ہو، وہ اپنے ہاتھوں سے اپنی تقدیر آپ لکھ لیں
رحمٰن حفیظ

امیرِ شہر نے کاغذ کی کشتیاں دے کر
سمندروں کے سفر پر کیا روانہ ہمیں
محسن نقوی

کاغذ پر شاعری

صرف اس کے ہونٹ کاغذ پر بنا دیتا ہوں میں
خود بنا لیتی ہے ہونٹوں پر ہنسی اپنی جگہ
انور شعور

وہ بھی شاید رو پڑے ویران کاغذ دیکھ کر
میں اس کو آخری خط میں لکھا کچھ بھی نہیں
ظہور نظر

بنا چکا ہوں میں خالی کاغذ پہ سبز اشجار
اور اب پرندوں کا چہچہانا بنا رہا ہوں
عدنان بیگ

قلم سے، حرف سے، کاغذ سے کیا نہیں ممکن؟
سِکھا رہی ہے محبت بھی جدتیں کیسی؟
آحسن مرزا

کیسی ترتیب سے کاغذ پہ گرے ہیں آنسو
ایک بھولی ہوئی تصویر ابھر آئی ہے
اقبال اشعر

کاغذ پر شاعری

چاند سا مصرعہ اکیلا ہے مرے کاغذ پر
چھت پہ آ جاؤ، مرا شعر مکمل کر دو
بشیر بدر

اب ڈوبنے لگے ہیں تو احساس یہ ہوا
کاغذ کی کشتیوں میں سفر کر رہے تھے ہم
مصطفٰی شہاب

نام سادہ کاغذ پر لکھ کے رہ گئے اس کا
اس سے آگے کیا لکھتے کچھ لکھا نہ جاتا تھا
نذیر قیصر

لفظ مر جائیں تو مفہوم بھی مر جاتے ہیں
کتنے کاغذ کے کفن خون سے بھر جاتے ہیں
نامعلوم

غزل

عادل رضا منصوری

چاند تارے بنا کے کاغذ پر
خوش ہوئے گھر سجا کے کاغذ پر

بستیاں کیوں تلاش کرتے ہیں
لوگ جنگل اگا کے کاغذ پر

جانے کیا ہم سے کہہ گیا موسم
خشک پتا گرا کے کاغذ پر

ہنستے ہنستے مٹا دیے اس نے
شہر کتنے بسا کے کاغذ پر

ہم نے چاہا کہ ہم بھی اڑ جائیں
ایک چڑیا اڑا کے کاغذ پر

لوگ ساحل تلاش کرتے ہیں
ایک دریا بہا کے کاغذ پر

ناؤ سورج کی دھوپ کا دریا
تھم گئے کیسے آ کے کاغذ پر

خواب بھی خواب ہو گئے عادلؔ
شکل و صورت دکھا کے کاغذ پر


شیئر کریں
صدف اقبال بہار، انڈیا سے تعلق رکھنے والی معروف شاعرہ اور افسانہ نگار ہیں۔

کمنٹ کریں