کائناتی سوال و جواب

تحریر : آفتاب سکندر

, کائناتی سوال و جواب

سوال :ستاروں اور سیاروں میں کیا فرق ہے؟
جواب : ستارہ :- ایسی فلکی جسم جس میں حرارت اور روشنی فیوژن کی وجہ سے پیدا ہوتی ہے. اور اُس میں فیوژن کی وجہ سے ہی جاذبیت متوازن ہوتی ہے.
سیارہ :- ایسا کروی فلکی جسم جو کسی ستارے کے گرد محوِ گردش ہوتا ہے.
نوٹ :یہ تصور قطعاً درست نہیں ہے کہ سیارے کی اپنی روشنی اور حرارت نہیں ہوتی ہے سیاروں کی اپنی روشنی اور حرارت ہوسکتی ہے مگر وہ فیوژن کے عمل سے پیدا کردہ نہیں ہوتی. جیسے مشتری سیارے کی اپنی روشنی اور حرارت ہے.
سوال :اگر زمین گھوم رہی ہے تو یہ قطب ستارہ اپنے گروپ کے ساتھ ہر وقت ایک جگہ پہ کیوں موجود نظر آتا ہے؟
جواب : قطبی ستارہ قطب کے بالکل عین اوپر واقع ہے. زمین کی قطبین کے گرد گردش سے قطبین ساکن معلوم ہوتے ہیں. اسی وجہ سے قطبی ستارہ عین قطبِ شمالی کے پاس ہونے کی وجہ سے ساکن معلوم ہوتا ہے.
یاد رہے کہ قطبی ستارہ ہمیں ساکن معلوم ہوتا ویسے یہ شمس کی طرح ملکی وے کے گرد محوِ گردش ہے. اس وجہ سے بھی یہ ساکن نظر آتا ہے.
قطبی ستارے کا فاصلہ 430 نوری سال ہے جب کہ سورج کے گرد زمین کا سفر 16 نوری منٹ سے زیادہ نہیں ہے. یہ وجہ بھی ہے.
سوال :ہزاروں سال پہلے بگ بینگ ہو ا یہ سائسدانوں کو کیسے پتا چلا ؟
جواب :سائنسی مفروضہ سائنسی نظریہ بنتا ہی تب ہے جب مشاہداتی ثبوت میسر آتے ہیں. باقی تمام نظریات کی طرح انفجارِ عظیم کے مشاہداتی ثبوت بھی ہمیں میسر ہیں جن کو ذیل میں درج کیا جارہا ہے.

  1. کہکشاؤں کا پھیلاؤ
    دور بین کی مدد سے ہم دیکھیں تو ہمیں پتہ چلتا ہے کہ کائنات میں کہکشائیں ایک دوسرے دور جارہی ہیں اور ان کا پھیلاؤ(ایک دوسرے سے دور جانا) ہبل کے قانون کے مطابق ہورہا ہے.
    V=H*D
    یہاں V کہکشاؤں کے دور جانے کی رفتار جبکہ H ہبل کانسٹنٹ اور D اس کہکشاں سے فاصلہ ہے.
    چونکہ کائنات مسلسل پھیل رہی ہے. کہکشائیں ایک دوسرے دور جارہی ہیں تو اس سے ہم اس نتیجہ پر پہنچتے ہیں کہ وقت میں پیچھے جائیں تو یقیناً یہ سب ایک نکتہ پر ملے گی.
  2. عناصر کا ظہور
    انفجارِ عظیم کے مطابق بضد ایٹمی ذرات ( subatomic particles) کے ملنے سے ہلکے عناصر وجود پذیر ہوئے اور پھر ان سے بھاری عناصر وجود میں آئے.
    کائنات کے اسرار و رموز سے واقفیت حاصل کرنے پر ہمیں معلوم ہوتا ہے کہ کائنات میں ہائیڈروجن اور ہیلیئم سے کائنات کا اٹھانوے فی صد مادہ بنا ہے. ہائیڈروجن 74 فیصد جبکہ ہیلیئم 24 فی صد ہے. یہ دونوں عناصر سب سے ہلکے عناصر ہیں. باقی ماندہ مادہ بقیہ عناصر سے مل کر بنا ہے. اس سے انفجارِ عظیم کے نظریہ کو تقویت ملتی ہے جس کے مطابق یہ دو عناصر انفجارِ عظیم کے وقت بنے جبکہ باقی ستاروں کے اندر عملِ ایتلاف سے وجود میں آئے.
    3.سنساری مائیکرو ویو جلوہ کا پس منظر (cosmic microwave radiation)
    کائنات میں جس سمت بھی نظر دوڑائیں ہمیں روشنی کا ایک پس منظر نظر آتا ہے. جو انفجارِ عظیم کے وقت بچ جانے والی روشنی کا ہالہ ہے یہ پس منظر ہر طرف یکساں ہے جس سے ہم اس نتیجہ پر پہنچتے ہیں کہ کائنات کسی وقت میں اتنی ٹھنڈی ہو چکی تھی کہ برقیہ (electrons) اور مرکزہ (proton) تعامل سے ہائیڈروجن ایٹم بناسکیں.
    4.کہکشاؤں کی بناوٹ
    روشنی کی رفتار محدود ہونے کے باعث ہم تک پہنچنے میں کچھ وقت لیتی ہے. جب ہم دیکھتے ہیں تو کہکشاؤں کی وہ تصویر ہمیں ماضی کی دکھائی دیتی ہے جو جتنا وقت روشنی کو ہم تک پہنچنے میں لگا. اتنا وقت پہلے تھی.
    اس لحاظ سے کہکشاؤں کے مطالعہ سے پتہ چلتا ہے کہ اُن میں وقت کے ساتھ تبدیلی واقع ہوئی ہے. جو کہ انفجارِ عظیم کی تائید میں آتا ہے.
  3. ہائیڈروجن گیسوں کے بادل
    کائنات میں کچھ مقامات پر ہائیڈروجن گیسوں کے بڑے بڑے بادل دیکھے جا سکتے ہیں. ان بادلوں میں سوائے ہائیڈروجن اور ہائیڈروجن کے آئسوٹوپ کے علاوہ کوئی اور دوسرا عنصر موجود نہیں. یہ بادل انفجارِ عظیم کے وقت بنے تھے. ابھی تک ان میں کوئی دوسرا عنصر بن نہیں پایا.
  4. کائنات کی ابتداء
    ہبل کے قانون اور کائنات کے پھیلاؤ سے جو کائنات کی عمر کا تخمینہ لگایا گیا ہے اس کے مطابق وہ ستاروں کی ریڈیو میٹرک ڈیٹنگ سے نکالی گئی عمر کی پیمائش کے برابر نکلتی ہے.
    سوال :سیریز سرکٹ کہاں استعمال ہوتی ہے؟
    جواب :متواتر دورہ (series circuit) کا استعمال مختلف جگہوں پر کیا جاتا ہے جن چراغاں کے لئے استعمال ہونے والی بتیاں جو کسی بھی تقریب میں کرتے ہیں وہ ہوگئی یا بلب کے اندر بھی استعمال کیا جاتا ہے. فریزر میں، ریفریجریٹرز میں استعمال ہوتا ہے.
    ——
    اپنی تحریر اس میل پہ ارسال کریں
  5. lafznamaweb@gmail.com
شیئر کریں

کمنٹ کریں