کتاب کے موضوع پر شاعری

book کتاب

کتاب ایک اچھی دوست ہے۔ یہ علم کا ایسا زینہ ہے جس کے بغیر انسان تہذیب و علمیت کی بلندیوں تک نہیں پہنچ سکتا۔ کسی چینی فلسفی کا قول ہے کہ جس گھر میں کتاب نہیں، اس گھر میں مت جائیے۔ اردو شاعری میں کتاب کے موضوع کو کئی نامور اور مشہور شعراء نے موضوعِ سخن بنایا ہے۔ آئینے کچھ بہترین اور عمدہ اشعار کا انتخاب پڑھتے ہیں۔

کتاب شاعری

یہ جو زندگی کی کتاب ہے یہ کتاب بھی کیا کتاب ہے
کہیں اک حسین سا خواب ہے کہیں جان لیوا عذاب ہے
راجیش ریڈی
۔
کوئی صورت کتاب سے نکلے
یاد سوکھے گلاب سے نکلے
ثمیر کبیر
۔
جب بھی کوئی کتاب لکھوں گا
تیرے نام انتساب لکھوں گا
معین شاداب
۔
اس کا لہجہ کتاب جیسا ہے
اور وہ خود گلاب جیسا ہے
جاذب قریشی
۔
درد کی اک کتاب ہے کوئی
زندگی اضطراب ہے کوئی
پونم یادو

کھلی کتاب کے صفحے الٹتے رہتے ہیں
ہوا چلے نہ چلے دن پلٹتے رہتے ہیں
گلزار
۔
وہ حیرتوں کی مکمل کتاب لکھ دینا
سوال کرنے سے پہلے جواب لکھ دینا
قمر سنبھلی
۔
کتاب پڑھتے رہے اور اداس ہوتے رہے
عجیب شخص تھا جس کے عذاب ڈھوتے رہے
شمیم حنفی
۔
کتر گیا ہے مری عمر کی کتاب کوئی
ملا کہیں سے بھی سالم نہ آج باب کوئی
مریم غزالہ
۔
اپنی کتابِ عمر کا انجام لکھ دیا
پہلے ورق پہ میں نے ترا نام لکھ دیا
معصوم انصاری

Kitab poetry urdu shayari

کتاب دل کے ورق جو الٹ کے دیکھتا ہے
وہ کائنات کو اوروں سے ہٹ کے دیکھتا ہے
شاہد جمال
۔
مری عروج کی لکھی تھی داستاں جس میں
مرے زوال کا قصہ بھی اس کتاب میں تھا
وکاس شرما راز
۔
کتاب عمر میں اک وہ بھی باب ہوتا ہے
ہر اک سوال جہاں لا جواب ہوتا ہے
سیماب سلطانپوری
۔
کتاب آرزو کے گم شدہ کچھ باب رکھے ہیں
ترے تکیے کے نیچے بھی ہمارے خواب رکھے ہیں
غلام محمد قاصر
۔
منافقت کا نصاب پڑھ کر محبتوں کی کتاب لکھنا
بہت کٹھن ہے خزاں کے ماتھے پہ داستان گلاب لکھنا
آفتاب حسین

کتاب شعر کتاب اشعار

ہمارا ہر دن کتاب کا ایک باب ہے اور
کتاب وحشت کی داستانوں پہ مشتمل ہے
عاجز کمال رانا
۔
کبھی آنکھیں کتاب میں گم ہیں
کبھی گم ہیں کتاب آنکھوں میں
محمد علوی
۔
ورق ورق سا بکھرتا کتاب غم جیسا
ملے گا شہر میں شاید ہی کوئی ہم جیسا
ساجد رئیس وارثی
۔
وہ اک کتاب جو منسوب تیرے نام سے ہے
اسی کتاب کے اندر کہیں کہیں ہوں میں
راحت اندوری
۔
یہ میز یہ کتاب یہ دیوار اور میں
کھڑکی میں زرد پھولوں کا انبار اور میں
ذوالفقار عادل

ہر شخص ہے اشتہار اپنا
ہر چہرہ کتاب ہو گیا ہے
قیصر الجعفری
۔
میرے دل کی کتاب مت پڑھنا
ڈگمگا جائیں گے تمہارے خیال
اجیت سنگھ بادل

شیئر کریں
مدیر
مصنف: مدیر
لفظ نامہ ڈاٹ کام کی اداریہ ٹیم کے مدیران کی جانب سے

کمنٹ کریں