نصیحت پر اشعار

نصیحت پر اشعار, نصیحت پر اشعار

نصیحت پر اشعار

ہر شخص پر کیا نہ کرو اتنا اعتماد
ہر سایہ دار شے کو شجر مت کہا کرو
مظفر وارثی

سن نصیحت مری اے زاہد خشک
اشک کے آب بن وضو مت کر
داؤد اورنگ آبادی

کیا کرتے ہو تم ناصح نصیحت رات دن مجھ کو
اسے بھی ایک دن کچھ جا کے سمجھاتے تو کیا ہوتا
نامعلوم

کل تھکے ہارے پرندوں نے نصیحت کی مجھے
شام ڈھل جائے تو محسنؔ تم بھی گھر جایا کرو
محسن نقوی

پھیکی ہے تیری نصیحت ساتھ میرے غل مچا
شور سے ناصح نمک آ جائے گا تقریر میں
میر محمد سلطان عاقل

میری ہی جان کے دشمن ہیں نصیحت والے
مجھ کو سمجھاتے ہیں ان کو نہیں سمجھاتے ہیں
لالہ مادھو رام جوہر

مجھی کو واعظا پند و نصیحت
کبھی اس کو بھی سمجھایا تو ہوتا
واجد علی شاہ اختر

ناصح تجھے آتے نہیں آداب نصیحت
ہر لفظ ترا دل میں چبھن چھوڑ رہا ہے
نامعلوم

درد سر ہے تیری سب پند و نصیحت ناصح
چھوڑ دے مجھ کو خدا پر نہ کر اب سر خالی
مردان علی خاں رانا

اہل نصیحت جتنے ہیں ہاں ان کو سمجھا دیں یہ لوگ
میں تو ہوں سمجھا سمجھایا مجھ کو کیا سمجھاتے ہیں
مصحفی غلام ہمدانی

نصیحت پر اشعار

نہیں بخشی ہے کیفیت نصیحت خشک زاہد کی
جلا دیو آتش صہبا سیں اس کڑبی کے پولے کوں
سراج اورنگ آبادی

فائدہ کیا ہے نصیحت سے پھرے ہو ناصح
ہم سمجھنے کے نہیں لاکھ تو سمجھائے ہمیں
آصف الدولہ

آتے ہیں عیادت کو تو کرتے ہیں نصیحت
احباب سے غم خوار ہوا بھی نہیں جاتا
فانی بدایونی

نہ مانوں گا نصیحت پر نہ سنتا میں تو کیا کرتا
کہ ہر ہر بات میں ناصح تمہارا نام لیتا تھا
مومن خاں مومن

ناصحا مت کر نصیحت دل مرا گھبرائے ہے
میں اسے سمجھوں ہوں کب جو تجھ سے سمجھا جائے ہے
نامعلوم

نصیحت پر اشعار

میں جو کہتا ہوں مجھ سے دور رہو
یہ نصیحت ہے التماس نہیں
سید ضامن عباس کاظمی

ہوتی ہے دوسروں کو ہمیشہ یہ ناگوار
اپنے سوا کسی کو نصیحت نہ کیجیئے
ساحر سیالکوٹی

مرا ضمیر بہت ہے مجھے سزا کے لیے
تو دوست ہے تو نصیحت نہ کر خدا کے لیے
شاذ تمکنت

آپ کی ضد نے مجھے اور پلائی حضرت
شیخ جی اتنی نصیحت بھی بری ہوتی ہے
حسن بریلوی

زخم جو تو نے دیے تجھ کو دکھا تو دوں مگر
پاس تیرے بھی نصیحت کے سوا ہے اور کیا
عرفان احمد


شیئر کریں
مدیر
مصنف: مدیر
لفظ نامہ ڈاٹ کام کی اداریہ ٹیم کے مدیران کی جانب سے

کمنٹ کریں