پتھر کے موضوع پر شاعری

پتھر دل شاعری انتخاب لفظ نامہ

پتھر کے موضوع پر اردو کی بہترین شاعری کا انتخاب پڑھیں اور پسند آنے پر دوستوں سے ساتھ شیئر کریں۔

دل پتھر کے لب پتھر کے
جس کو دیکھو سب پتھر کے
کرشن پرویز
۔
پتھر کے خدا پتھر کے صنم پتھر کے ہی انساں پائے ہیں
تم شہر محبت کہتے ہو ہم جان بچا کر آئے ہیں
سدرشن فاکر
۔
تمام پھینکے گئے پتھروں پہ بھاری تھا
وہ ایک پھول اکیلا سبھوں پہ بھاری تھا
فرخ جعفری
۔
پتھر ہیں سبھی لوگ کریں بات تو کس سے
اس شہر خموشاں میں صدا دیں تو کسے دیں
آنس معین
۔
ہر طرف پتھر ہی پتھر درمیاں شیشے کا گھر
لے رہا ہے شاید اپنا امتحاں شیشے کا گھر
سید طیب واسطی

ہر جانب سے آئے پتھر
اشک آنکھوں میں لائے پتھر
شبیر ناقد
۔
دل بھی پتھر سینہ پتھر آنکھ پہ پٹی رکھی ہے
کس نے یہ پانی سے باہر ریت پہ مچھلی رکھی ہے
انتظار غازی پوری
۔
پتھر کو پوجتے تھے کہ پتھر پگھل پڑا
پل بھر میں پھر چٹان سے چشمہ ابل پڑا
سعید احمد
۔
اپنی قسمت کے ہوئے سارے ستارے پتھر
پھول دامن میں ترے اور ہمارے پتھر
رشیدالظفر

میری مٹی میں جب نہ تھا پتھر
کیسے کہہ دوں کہ ہے خدا پتھر
ڈاکٹر اعظم
۔
حسین تاج کی صورت یہ بے صدا پتھر
دکھا رہے ہیں محبت کا معجزہ پتھر
صبیحہ سنبل
۔
انسان کو ملتے ہیں نئی بات کے پتھر
ٹکراتے ہیں جس وقت خیالات کے پتھر
ظہیر النساء نگار
۔
پرستش کر رہا ہے ہر جوان و پیر پتھر کی
صنم خانے میں آ کر جاگ اٹھی تقدیر پتھر کی
جوہر بدایونی

کون سا ہے شہر جس میں میں بھٹک کر آ گیا
راستے پتھر کے ہیں اور بام و در پتھر کا ہے
اظہر نیر
۔
کسی کی جبہ سائی سے کبھی گھستا نہیں پتھر
وہ چوکھٹ موم کی چوکھٹ ہے یا میری جبیں پتھر
حبیب موسوی
۔
اگر خود پر بھروسا ہے تو الفتؔ
ابھر آتے ہیں چہرے پتھروں پر
الفت بٹالوی
۔
جن کے رستوں سے سدا میں نے ہٹائے پتھر
وہ مرے سر کے لئے ڈھونڈ کے لائے پتھر
افروز رضوی
۔
نظر کر تیز ہے تقدیر مٹی کی کہ پتھر کی
بتوں کو دیکھ ہیں تصویر مٹی کی کہ پتھر کی
رشید لکھنوی

ان چٹختے پتھروں پر پاؤں دھرنا دھیان سے
ڈھل چکی ہے شام وادی میں اترنا دھیان سے
بشیر احمد بشیر
۔
مقدس پتھروں پر مدعا روشن نہ ہونے کا
کہاں سر پھوڑیے اب معجزہ روشن نہ ہونے کا
خورشید اکبر
۔
مجھے پتھروں سے بڑھ کر تری اک کلی نے مارا
مجھے دشمنوں سے بڑھ کر تری دوستی نے مارا
کریم رومانی
۔
ہر گھڑی ہر لمحہ اٹھتے پتھروں کے ساتھ میں
ٹوٹے ٹوٹے کتنے شیشوں کے گھروں کے ساتھ میں
نعمان امام

شیئر کریں
مدیر
مصنف: مدیر
لفظ نامہ ڈاٹ کام کی اداریہ ٹیم کے مدیران کی جانب سے
1 Comment
  1. Avatar

    وہ رہ چُکا ہے مِری پسلیوں کے بیچ کہیں
    وہ بد لحاظ جو پتھر پُکارتا ہے مجھے
    #Sayedkamishah

    Reply

کمنٹ کریں