سرخ، سفید اور سیاہ

, سرخ، سفید اور سیاہ

“یہ کتاب افغانستان میں 1979 سے 2001 کے درمیان پر ہونے والے واقعات پر ہے۔ افغانستان میں عدم استحکام، خانہ جنگی، دہشت گردی کے اس دور میں تین رنگ نمایاں نظر آتے ہیں۔ سرخ، سفید اور سیاہ۔ نہیں، یہ صرف مارکسزم، طالبان اور القاعدہ کے رنگ نہیں۔ ہر جگہ پر ہونے والی جنگ، عدم استحکام اور خانہ جنگی کے رنگ ہیں۔افغانستان میں ہونے والی جنگ میں ہر کوئی اپنے نظریے، اپنے مقصد کے لئے لڑتا رہا۔ اور ہر ایک کو یہ معلوم تھا کہ اس جنگ میں کون کون سے فریق غلط ہیں۔ہر لڑائی اسی وقت شروع ہوتی ہے، جب دنیا ٹھیک اور غلط میں تقسیم ہو جائے۔ سیاہ اور سفید میں بٹ جائے۔ تاریخ یہ بتاتی ہے کہ اگر سیاہ اور سفید نمایاں ہوتے جائیں، تو جلد ہی ایک اور رنگ ان کے ساتھ آ جاتا ہے۔ سرخ۔ یہ انسانی خون کا رنگ ہے۔افغانستان کے ان سالوں میں یہی سرخ رنگ نمایاں تھا۔ لیکن اس کے پیچھے دو اور رنگ تھے۔ سیاہ اور سفید۔ سیاہ کون اور سفید کون؟ یہ کتاب اس بارے میں نہیں۔”جو دوست افغان جنگ کے موضوع پر لکھی ہوئی میری تحریروں کے سلسلے میں دلچسپی رکھتے ہوں، وہ اس کو کتابی شکل میں مندرجہ ذیل لنک سے حاصل کر سکتے ہیں۔ ساتھ دئے گئے لنک پر جائیں۔ اس کے بعد جا کر “Add to Cart” کریں، پھر “Proceed to Checkout” اور پھر “Place Order”۔ (اگر آپ کا اس ویب سائٹ پر اکاوٗنٹ نہیں ہے تو اس سٹیپ پر بنانا ہو گا)۔ اس کے بعد PDF حاصل کرنے کا لنک مل جائے گا۔

http://www.lulu.com/…/afgha…/ebook/product-24332864.html
اپنی تحریر اس میل پہ ارسال کریں
lafznamaweb@gmail.com

شیئر کریں
مدیر
مصنف: مدیر
لفظ نامہ ڈاٹ کام کی اداریہ ٹیم کے مدیران کی جانب سے

کمنٹ کریں