سیف الرحمن ادیؔب کی سولفظی کہانیاں

کہانی, سیف الرحمن ادیؔب کی سولفظی کہانیاں

افسانہ نگار : سیف الرحمن ادیؔب

جلیبی سو لفظی کہانی

وہ جلیبی کا ٹکڑا تھا،
جو حلوائی کے تھال سے نیچے گر گیا تھا۔
گرتے وقت صاف تھا،
لیکن چند ہی لمحوں میں دھول ہو گیا،
اس پر لگی چکناہٹ مٹی کو اپنے سینے سے لگا رہی تھی۔
بھرا بازار تھا،
کوئی سامنے سے گزرتا تو وہ ٹکڑا کچھ دیر کو اوجھل ہو جاتا،
بےچینی سی ہو جاتی،
جب نظر آتا،
گویا چین آ جاتا۔
یہ کم بخت کچرا چننے والے کو بھی وہیں گرنا تھا۔
لڑکا بالکل جلیبی کے پاس گرا تھا۔
اٹھا، کپڑے جھاڑے اور چلا گیا۔
میں نے وہاں دیکھا،
جلیبی کا ٹکڑا غائب ہو چکا تھا۔

محمودہ قریشی کے افسانچے یہاں کلک کرکے پڑھیں

پیٹرول سو لفظی کہانی

چھوٹے پر عجیب دورہ پڑا تھا، بار بار ایک ہی بات کہتا،
“پیسے بچاؤں گا، پیٹرول خریدوں گا۔”
روٹی کھانی چھوڑ دی، میں نے کہا، “آٹا خرید لو!”
بولا: “پیسے بچاؤں گا، پٹرول خریدوں گا۔”
چار بچوں کا باپ ہے۔ بیٹی دو دن تک بستر پر رہی،
تیسرے دن جا کر میں نے ہاتھ جوڑے،
“خدا کے لیے دوائی لے لو!”
“پیسے بچاؤں گا، پیٹرول خریدوں گا۔”
نہ جانے کتنے دنوں کی بھوک بیچ کر پیسے پورے ہوئے،
کل خوشی خوشی سب کو بوتل میں بھرا پیٹرول دکھا رہا تھا،
اور آج صبح خود پر چھڑک کر آگ لگا دی۔

محمد جاوید انور کے افسانچے بھی پڑھئے

آدھی کہانی : سولفظی کہانی

چھوٹے نے کہانی شروع کی:
“ایک دفعہ کا ذکر ہے کہ سیٹھ نے چائے کی چسکی لی،
میٹھا کم تھا، باورچی کی تذلیل کی۔
کپڑے پہنے، ذرا داغ رہ گیا تھا، دھوبی کو رسوا کیا۔
گاڑی میں بیٹھا، ڈرائیور سے غلطی ہوئی، کھری کھری سنادی۔
آفس پہنچا، ملازم کا کام پسند نہیں آیا، سرِعام اس کی عزت کی دھجیاں اڑائیں۔
دوسری دفعہ کا ذکر ہے کہ سیٹھ مفلس ہو گیا۔ آدھی کہانی ختم۔”
“باقی قصہ کہاں ہے؟” میں نے پوچھا تو چھوٹا بےنیازی سے بولا:
“اگلی داستان خود ڈھونڈ لو! کہیں نہ کہیں مل جائے گی،
عبرت کی داستانوں میں۔

شیئر کریں
مدیر اعلیٰ
مصنف: سیف الرحمن ادیؔب
صدف اقبال بہار، انڈیا سے تعلق رکھنے والی معروف شاعرہ اور افسانہ نگار ہیں۔

کمنٹ کریں