غزل

محمد طیب برگچھیاوی

خوف تھا

شاعر : محمد طیب برگچھیاوی,سیتامڑھی مجھ سے ملنے میں صنم رسوائیوں کا خوف تھاآپ کو توبھیڑکی پرچھائیوں کا خوف تھا دشمنوں کی چال سے مجھ کو نہیں لگتا تھا ڈرنا سمجھ کی کی ہوئی اچھائیوں کا خوف تھا ہم سمندر پا...

اشہد کریم الفت

صدف اقبال کا شعری تعارف

مضمون نگار : ڈاکٹر اشہد کریم الفت اردو کے موجودہ شعری منظر نامے پر صدف اقبال کا نام جس تیزی سے ابھرا ہے وہ کئی لحاظ سے ہمیں چونکاتا ہے۔ صدف اقبال کا تعلق پٹھانوں کے ایک مشہور گاؤں “بھدیہ” ...

غزل

کم ہی ہوتے ہیں مقدر کےسکندر چہرے کتنے مُرجھائے ہیں ان چہروں کے اندر چہرے اہل کشتی کو تو ساحل کے ہی خواب آتے ہیں تکتا رہتا ہے سفینوں کے سمندر چہرے قہر کیا ٹوٹ پڑا رات کو اِسی بستی پر ایسے جُھلسے جو نظر...

Haqqani Al Qasmi/حقانی القاسمی

شاعری کے مختلف رنگ : ساحر اور معیار عظمت کی منطق

مضمون نگار– حقانی القاسمی ساحر کو کسی سند کی ضرورت نہیں کہ ان کے کلام میں ماورائے زماں زندہ رہنے کی بھرپور قوت موجود ہے۔ وجودیاتی یا علمیاتی بیان کی حاجت بھی نہیں کہ ساحر کی شاعری اتنی شفاف، واض...

اسلم حسن

زندہ دفن کر دی گئی بیٹیوں کے نام

نظم نگار : اسلم حسن جب کھینچ لی جائے گی آسمان کی خالاور سورج سوا نیزے پر آجائے گاجب اونٹنیاں بِل بِلائیں گی اورپہاڑ روئی بن جائے گاجب ماں انکار کر دے گی اپنے بیٹوں کوپہچاننے سےتب اُس قیامت کے دن الل...

شاکر حسین شاکر

ایک ناقد کی موت

شاعر : خلیل مامون خدا مرگیا ہےفرشتےمصروف ہیںحمد و ثنا میںمناجات میںاگر وہ خدا تھاتو کیسے مرا وہموت اگر اسکو آی تو کیسےسارے الفاظ چپساری کتببند الماریوں میں پڑی ہیںایسے جیسےکچھ ہوا ہی نہ ہونئی باتِیںپ...

حسن نوید

غزل

شاعر : حسن نوید میرا دیرینہ مسئلہ حل کرھجر آ کر مجھے مکمل کر پیٹ خالی ہے میری آنکھوں کادید کے رزق کو مسلسل کر میرے ویران گھر کو رونق بخشتھوہر قسمت کو میری صندل کر روشنی من میں یوں نہیں ہوتیجانا پڑتا...

محمد عباس

اکرام اللہ کے افسانے

مضمون نگار : محمد عباس اردو کے بہت سے معروف افسانہ نگاروں سے ہٹ کر ایک نسبتاً کم معروف نام اکرام اللہ کا ہے جنہوں نے افسانہ لکھنے کے عمل کو حصولِ شہرت کا ذریعہ نہیں سمجھا۔ اکرام اللہ اردو کے جدید افسا...

دعا عظیمی

صنوبر صدیوں کا مسافر

نظم نگار : دعا عظیمی وہ میرے قریب آئی تو میرے صدیوں کا انتظار کھل اٹھا.“سنیں! جب سرما بیت جائے اور گل لالہ کھلنے لگے تو صنوبر کے درخت کا حال پوچھنے چلیں گے.”وہ ایک عزم اور ارادے سے بولیان...