دستک

افسانہ نگار : محمد شمشاد صبح سویرے کرن کے دروازہ پر کسی نے دستک دی ایک دو نہیں کئی بار ،نہ چاہ کر بھی وہ بستر سے اٹھی اوربڑبڑاتے ہوئے اس نے دروازے کی جانب اپنا قدم بڑھادیا ’’پتہ نہیں اتنا سویرے سویرے کون آگیا ، وہی ہونگے مانگنے والے، انہیں بھی اتنی جلدی ہوتی… Continue reading دستک