ظلم مخالف انقلابی شاعری

Read Urdu Poetry on the topic of Zulm Par Urdu Shayari (Zulm Kay Khilaf Shayari). You can read famous Urdu Poems about Struggle Urdu Poetry and Motivational Urdu Poetry Sher o Shayari Whatsapp Status. Best and popular Urdu Ghazals and Nazms can be shared with friends. Urdu Tiktok Status Poetry and Facebook Share Urdu Poetry available.

جیل قید ظلم انقلاب

ظلم اور بربریت کے خلاف انقلابی آواز بلند کرنے میں اردو شاعری کا بہت کردار رہا ہے۔ جب ظلم بڑھ جاتا ہے تو انقلاب کی راہیں کھل جاتی ہیں۔ تخت الٹ دیے جاتے ہیں، اور تاج تاراج کر دیے جاتے ہیں۔ بہت سے معروف اردو شاعروں نے ظلم کے خلاف شعر کہے، انقلابی شاعری تخلیق کی۔ انہی موضوعات پر چند بہترین اشعار کا انتخاب پڑھیے۔

ظلم انقلاب شاعری inqilabi

ہم امن چاہتے ہیں مگر ظلم کے خلاف
گر جنگ لازمی ہے تو پھر جنگ ہی سہی
ساحر لدھیانوی
۔
کام ہے میرا تغیر نام ہے میرا شباب
میرا نعرہ انقلاب و انقلاب و انقلاب
جوش ملیح آبادی
۔
اور سب بھول گئے حرفِ صداقت لکھنا
رہ گیا کام ہمارا ہی بغاوت لکھنا
حبیب جالب
۔
چلتے ہیں دبے پائوں کوئی جاگ نہ جائے
غلامی کے اسیروں کی یہی خاص ادا ہے
ہوتی نہیں جو قوم ، حق بات پہ یکجا
اُس قوم کا حاکم ہی بس اُن کی سزا ہے
فیض احمد فیض
۔
ظلم سہنا بھی تو ظالم کی حمایت ٹھہرا
خامشی بھی تو ہوئی پشت پناہی کی طرح
پروین شاکر

ظلم بربریت شاعری انقلاب

ظلم کے ہوتے امن کا ممکن یارو
اسے مٹا کر جگ میں امن بحار کرو
حبیب جالب
۔
حیرت ہے کہ تعلیم و ترقی میں ہے پیچھے
جس قوم کا آغاز ہی “اقراء” سے ہوا تھا
۔
منصفِ وقت ہے تو اور میں مظلوم مگر
تیرا قانون مجھے پھر بھی سزا ہی دے گا
منور رانا
۔
ابھی تک پائوں میں لپٹی ہیں زنجریریں غلامی کی
دن آ جاتا ہے آزادی کا ، آزادی نہیں آتی
۔
تاریخ کی سیاہی چہروں پہ اپنے مَل کے
کرتے ہین ہم غلامی، آقا بدل بدل کے
سکندر عقیل

ظلم مخالف انقلابی شاعری

ظلم پھر ظلم ہے بڑھتا ہے تو مٹ جاتا ہے
خون پھر خون ہے ٹپکے گا تو جم جائے گا
ساحر لدھیانوی
۔
انقلاب آئے گا رفتار سے مایوس نہ ہو
بہت آہستہ نہیں ہے جو بہت تیز نہیں
علی سردار جعفری
۔
رنگ محفل چاہتا ہے اک مکمل انقلاب
چند شمعوں کے بھڑکنے سے سحر ہوتی نہیں
قابل اجمیری
۔
یہ کہہ رہی ہے اشاروں میں گردش گردوں
کہ جلد ہم کوئی سخت انقلاب دیکھیں گے
احمق پھپھوندوی
۔
انقلاب صبح کی کچھ کم نہیں یہ بھی دلیل
پتھروں کو دے رہے ہیں آئنے کھل کر جواب
حنیف ساجد
۔
بہت برباد ہیں لیکن صدائے انقلاب آئے
وہیں سے وہ پکار اٹھے گا جو ذرہ جہاں ہوگا
علی سردار جعفری

شیئر کریں
مدیر
مصنف: مدیر
لفظ نامہ ڈاٹ کام کی اداریہ ٹیم کے مدیران کی جانب سے

کمنٹ کریں